”مجھے گرل فرینڈ ڈھونڈنے میں مشکلات کا سامنا تھا ، اس لیے میں نے ۔ ۔ ۔“ چینی نوجوان نے انتہائی حیران کن قدم اٹھا لیا

بیجنگ چین کی حکومت نے ملک میں صرف ایک بچہ پیدا کرنے کی پالیسی کے ذریعے آبادی پر تو کنٹرول حاصل کرلیا لیکن اس کی وجہ سے دیگر بہت سے مسائل پیدا ہوئے ہیں، اسی پالیسی کی وجہ سے بہت سے شہروں میں 100 لڑکیوں کے مقابلے میں لڑکوں کی تعداد 130 ہے جس کی وجہ سے لڑکوں کو اپنا لائف پارٹنر ڈھونڈنے میں بے پناہ مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے

جس کا حل ڈھونڈنے کے لیے ایک چینی نوجوان نے منفرد طریقہ کار اختیار کیا اور گرل فرینڈ ڈھونڈنے کی خاطر لڑکیوں کی یونیورسٹی میں داخلہ لے لیا۔ایکسپریس نیوز کے مطابق چین کے دارالحکومت میں لڑکیوں کی یونیورسٹی میں 18 سالہ لڑکے نے داخلہ لے لیا اور جب نوجوان سے پوچھا گیا کہ وہ لڑکیوں کی یونیورسٹی میں کیوں داخلہ لینا چاہتا ہے تو اس نے یہ اعتراف کرنے میں دیر نہیں کی کہ دراصل وہ یہاں اس لیے تعلیم حاصل کرنا چاہتا ہے کہ اسے گرل فرینڈ بنانے میں مشکل کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ نوجوان کا کہنا تھا کہ چونکہ یہاں بہت ساری لڑکیاں تعلیم حاصل کرتی ہیں اس لیے مجھے اپنے لیے جیون ساتھی چننے میں آسانی ہوگی لیکن میرے والد میرے حوالے سے بہت پریشان ہیں کیوں کہ انہیں لگتا ہے کہ ایک لڑکے کے لیے ایسے ماحول میں تعلیم حاصل کرنا جہاں چاروں طرف لڑکیاں موجود ہوں، لڑکے میں تبدیلی کا باعث بھی بن سکتا ہے۔واضح رہے کہ بیجنگ میں قائم لڑکیوں کی یونیورسٹی ہر سال 15 لڑکوں کو داخلے کا موقع فراہم کرتی ہے جو 1500 لڑکیوں کے ساتھ تعلیم حاصل کرتے ہیں اور اس کے لیے انہیں انٹرویو کے سخت مرحلے سے گزرنا پڑتا ہے تاہم ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ کسی لڑکے نے علی الاعلان یہ کہہ کر داخلہ لیا ہے کہ وہ لڑکی ڈھونڈے کی خواہش میں یہاں پڑھنا چاہتا ہے اور یونیورسٹی انتظامیہ نے اس موقف کے بعد بھی لڑکے کو داخلہ دے دیا۔