اب اگر مسجد میں یہ کام نہ کیاگیا تو امام اور موذن کو جیل میں ڈال دیاجائے گا سب سے بڑا فیصلہ کرلیاگیا

اسلام آباد وزارت مذہبی امور نے ملک بھر میں یکساں صلوٰة و اذان کے نفاذ اور اس کی خلاف ورزی پر سزا کا قانونی مسودہ تیار کرلیا ہے. نجی ٹی وی کے مطابق وزارت مذہبی امور نے ملک میں یکساں نظام صلوٰة و اذان کے اوقات کار کے عنوان سے یکساں اذان و صلوٰة 2018ءکا ڈرافٹ تیار کرلیا ہے جس میں حکومتی نظام اذان و صلوٰة پر

عملدرآمد نہ کرنے والوں کو سزائیں دینے کی بھی تجویز شامل کی گئی ہے اور اس حوالے سے ایک باقاعدہ قانونی مسودہ بھی تیار کرلیا گیا ہے. مجوزہ بل کے مطابق یکساں نظام اذان و صلوٰة کے کیلنڈر ہر مسجد و امام بارگاہ میں لازماً آویزاں کئے جائیں گے اور جو خطیب یا امام و مذن حکومتی شیڈول کی خلاف ورزی کرے گا اسے 6 ماہ قید اور 5 ہزار روپے جرمانہ کیا جائے گا۔اور مسلسل خلاف ورزی کرنے والے کی سزا میں اضافے کی بھی تجویز ہے. مجوزہ ڈرافٹ بل کے اغراض و مقاصد میں کہا گیا ہے کہ یہ بل بین المسالک ہم آہنگی کی غرض سے مرتب کیا جارہا ہے اور اس کا نفاذ ابتدائی طور وفاقی دارالحکومت میں کیا جائے گا اور بعد میں اس نظام کو ملک بھر میں لاگو کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں گے. وزارت مذہبی امور نظام اذان و صلوٰة کی نگرانی کے لئے ایک کمیٹی بھی قائم کرے گی، نگران کمیٹی وزیر مذہبی امور، سیکرٹری مذہبی امور کی کنویئر شپ میں قائم کی جائے گی جبکہ میئر و چیف کمشنر اسلام آباد کمیٹی کے ممبران ہوں گے. کمیٹی کی مدت دو سال ہوگی اور ہر دو سال کے بعد نئی کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔جبکہ میئر و چیف کمشنر اسلام آباد کمیٹی کے ممبران ہوں گے. کمیٹی کی مدت دو سال ہوگی اور ہر دو سال کے بعد نئی کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔