’تم نے جسم کے اس حصے کا آپریشن کروایا ہے، پولیس میں نوکری نہیں مل سکتی‘ نوجوان لڑکی کو ایسی بات کہہ کر ٹھکرادیا گیا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا

برلن سکیورٹی فورسز میں بھرتی ہونے کے خواہش مند مردوخواتین پر جسمانی فٹنس کے کئی ضابطے لاگو ہوتے ہیں، ان کے جسم میں کوئی نقص ہو تو انہیں بھرتی نہیں کیا جاتا لیکن جرمنی میں ایک خاتون کو ایسے جواز پر نوکری سے جواب دے دیا گیا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا۔ میل آن لائن کے مطابق

32سالہ شینتل نامی خاتون نے 2012ءمیں پولیس میں بھرتی ہونے کے لیے درخواست دی تھی لیکن پولیس حکام نے اس کی درخواست یہ کہہ کر مسترد کر دی کہ اس نے اپنی چھاتی کی پلاسٹک سرجری کروا رکھی ہے۔حکام کا موقف تھا کہ مصنوعی چھاتی صحت کے خطرہ ہوتی ہے لہٰذا خاتون کو پولیس میں بھرتی نہیں کیا جا سکتا۔ اس پر شینتل حکام کے خلاف عدالت چلی گئی جہاں سے اب اس کے حق میں فیصلہ آ گیا ہے اور عدالت نے پولیس کو بھرتی کے متعلق اپنے قواعدوضوابط پر نظرثانی کرنے کا حکم دے دیا ہے۔فیصلہ آنے کے بعد شینتل کا کہنا تھا کہ ”میں نے تمام ٹیسٹ پاس کر لیے تھے، اس کے باوجودبرلن پولیس میں مجھے نوکری نہیں دی گئی۔ عدالت کا فیصلہ آنے پر میں بہت خوش ہوں۔ اب پولیس حکام کسی لڑکی کو پلاسٹک سرجری کا بہانہ کرکے بھرتی سے انکار نہیں کر سکیں گے۔“