ان دونوں مردوں کو سڑک پر مکمل برہنہ حالت میں کیوں گھمایا جارہا ہے؟ وجہ جان کر ہر شخص توبہ پر مجبور ہوجائے

نئی دہلی بھارت خواتین کے ساتھ جنسی زیادتیوں کے حوالے سے دنیا میں بھر میں پہلے نمبر پر آتا ہے جہاں لڑکیوں کو ان کے کالجز اور بھرے بازاروں سے اٹھا کر زیادتی کا نشانہ بنا دیا جاتا ہے۔ خواتین کے تحفظ کی اس ناگفتہ بہ صورتحال پر اب بظاہر بھارتی شہریوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے اور

انہوں نے جنسی درندوں کو خود سزا دینے کی ٹھان رکھی ہے۔ گزشتہ روز بھارتی ریاست اروناچل پردیش سے ایک ایسی ویڈیو سامنے آئی ہے کہ دیکھ کر کوئی بھی مرد کسی خاتون پر بری نگاہ ڈالنے سے پہلے سوچے گا۔ میل آن لائن کے مطابق یہ ویڈیو اروناچل کے شہر ینگ کیونگ میں بنائی گئی جس میں 17سالہ لڑکی سے اجتماعی زیادتی کے دو ملزمان کو سرعام برہنہ کرکے خواتین تشدد کا نشانہ بنا رہی ہوتی ہیں اور پھر اسی حالت میں ان کی پریڈ کرواتی ہوئی انہیں پولیس سٹیشن تک لے کر جاتی ہیں۔بتایا گیا ہے کہ متاثرہ لڑکی کی ملزمان میں سے ایک کے ساتھ سوشل میڈیا پر دوستی ہوئی اور وہ اس سے ملنے گئی لیکن اس ملزم نے وہاں اپنے تین دیگر ساتھیوں کو بھی بلا رکھا تھا۔ ان سب نے لڑکی کو رات بھر زیادتی کا نشانہ بنایا اور علی الصبح اس کے گھر چھوڑ گئے۔ اگلے روز لڑکی پولیس سٹیشن گئی اور ان کے خلاف رپورٹ درج کروا دی۔ اتفاق سے یہ دو ملزمان شہریوں کے ہتھے چڑھ گئے جنہیں انہوں نے برہنہ کرکے تشدد کا نشانہ بنایا اور پولیس کے حوالے کر دیا۔ پولیس دوسرے دو ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مار رہی ہے۔

واضح رہے کہ ارونا چل پردیش کے شہریوں میں جنسی زیادتی کے ملزمان کو خود سے سزا دینے کا رجحان تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ ایک ماہ قبل شہریوں نے 5سالہ بچی سے زیادتی کے ملزم کو چوراہے میں تشدد کے بعد آگ لگا کر زندہ جلا دیا تھا۔ ان دوملزمان کو تشدد کا نشانہ بنانے کے واقعے سے ایک روز قبل مشتعل شہریوں نے ایک پولیس سٹیشن کو آگ لگا دی تھی۔ یہ لوگ تھانے میں بند لڑکی سے زیادتی کے ملزمان کو قتل کرنے گئے تھے لیکن پولیس اس سے پہلے ہی ملزمان کو کہیں اور منتقل کر چکی تھی، جس پر غصے سے بپھرے شہریوں نے تھانہ ہی جلا ڈالا۔