نوجوان لڑکی نے مفت تعلیم حاصل کرنے کا سب سے شرمناک طریقہ بتادیا

لندن: اپنی تعلیم کے اخراجات یا دیگر ضروریات کے لیے نوعمر لڑکیوں کے عمر رسیدہ معاشقوں کی خبریں تو سنتے رہتے تھے لیکن اب پہلی بار ایسی ایک لڑکی نے زبان کھول دی ہے، جس نے اپنی تعلیم کے لیے عمررسیدہ امیر مردوں کے ساتھ تعلقات استوار کیے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق اس لڑکی کا نام ڈینئیلی ہے جو لندن کی رہائشی اور ریونزبرن یونیورسٹی کی طالبہ ہے۔

پچیس سالہ ڈینئیلی نے بتایا کہ ”میں نے پہلی بار ’شوگر بے بی‘(پیسوں کے لیے عمر رسیدہ افراد سے تعلق قائم کرنے والی نوعمر لڑکی)بننے کا فیصلہ اس وقت کیا جب میں نے یونیورسٹی کے لیے گھر چھوڑا۔ مجھے اپنی عمر کے لڑکوں میں کوئی دلچسپی نہیں تھی کیونکہ میرے خیال میں عمر رسیدہ مرد ہی میرے تعلیمی اخراجات اٹھانے کے لیے مناسب تھے۔جب میرے والدین کو اس بات کا علم ہوا توانہوں نے بھی اس میں کوئی قباحت محسوس نہیں کی اور میری سہیلیاں تو اس پر خوش ہوئیں کیونکہ ان میں سے بھی اکثر یہ کام کر چکی تھیں۔“ڈینئلی نے بتایا کہ ”میں نے ایک ویب سائٹ جوائن کی جو شوگر بے بی کے اشتہارات کے لیے بنائی گئی تھی۔اسی ویب سائٹ کے ذریعے اب تک میں درجنوں عمر رسیدہ مردوں سے مل چکی ہوں اور ان سب سے میری ملاقات انتہائی خوشگوار رہی۔ میں سمجھتی ہوں کہ زیادہ عمر کے مردوں کو معلوم ہوتا ہے کہ انہیں ایک لڑکی سے کس طرح کا رویہ رکھنا ہے۔ یہ تمام مرد میرے ساتھ بہت شرافت سے پیش آئے۔ ان کی وجہ سے میں انتہائی لگژری ہوٹلوں میں گئی جہاں جانے کا میں سوچ بھی نہیں سکتی تھی اور ان کی وجہ سے ہی میں لگژری چھٹیوں سے بھی لطف اندوز ہوئی۔ ان میں سے اکثر کے ساتھ جنسی تعلق استوار کرنے کی کوئی شرط نہیں تھی لیکن اگر کوئی اچھا لگے تو باہمی رضامندی سے جنسی تعلق قائم کرنے میں بھی کوئی قباحت نہیں۔میں نے بھی کئی مردوں سے جنسی تعلق استوار کیا ہے۔ اس وقت جو میرا شوگر ڈیڈی ہے، اس کے ساتھ میرا تعلق ایک سال سے ہے اور میں اس کو بہت پسند کرتی ہوں۔