Brain

جب آپ کے دل کی دھڑکن بند ہوجائے تو آپ کے دماغ میں فوری کیا تبدیلی آتی ہے؟

نیویارک : موت کے فوری بعد انسان کے دماغ میں کیا تبدیلی آتی ہے؟ سائنسدانوں نے پہلی بار اس کا ایسا حتمی جواب دے دیا ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے. میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق امریکہ اور جرمنی کے سائنسدانوں نے اپنی نوعیت کی منفرد اور طویل ترین مشترکہ تحقیق کے بعد بتایا ہے کہ

”جب انسان کے دل کی دھڑکن بند ہوتی ہے تو دماغ کو خون کی فراہمی رکنے کے فوری بعد اس میں ڈپریشن کی ایک شدید لہر پھیلتی ہے۔دماغ اس قدر متحرک ہو جاتا ہے کہ اس میں ایک ہنگامہ برپا ہوجاتا ہے۔اور اس کے بعد یہ مکمل طور پر بند ہو جاتا ہے.یہ ڈپریشن اور حد سے زیادہ تحرک وہ آخری کام ہے جو ہمارا دماغ موت سے پہلے کرتا ہے.“ اس تحقیق میں سائنسدانوں نے سینکڑوں قریب المرگ لوگوں کے دماغ کو آلات لگا کر موت کے وقت اور اس کے بعد ان کے دماغ کی حالت کا اندازہ لگایا اور نتائج مرتب کیے ہیں. سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ”خون کی فراہمی رکنے کے بعدجسم مردہ قرار دے دیا جاتا ہے، دماغ اس کے بعد 5سے 20سیکنڈ تک کام کرتا رہتا ہے اور پھر مکمل بند ہو جاتا ہے تاہم اس کے بعد پانچ منٹ سے زائد وقت تک انسان کا شعور کام کرتا رہتا ہے اور انسان موت کے بعد بھی اپنے اردگرد ہونے والے واقعات سے آگاہ ہوتا ہے اور لوگوں کی آوازیں سنتا رہتا ہے. یہی وجہ ہے کہ جسم کو مردہ قرار دیئے جانے کے پانچ منٹ بعد تک اس شخص کو واپس زندگی کی طرف لانے کا موقع موجود ہوتا ہے. دل کا دورہ پڑنے کے متعدد کیسز میں مریضوں کو مردہ قرار دیئے جانے کے پانچ منٹ بعد واپس زندگی کی طرف لانے کے واقعات ہو چکے ہیں۔