ڈاکٹر نے شہری کے نازک حصے سے 3 فٹ لمبی تار نکال لی، یہ اس کے جسم کے اندر کس طرح پہنچی؟ کوئی شخص کبھی تصور بھی نہیں کرسکتا

بیجنگ: کچھ لوگوں کو خود ہی ڈاکٹر بن کر اپنی بیماریوں کا علاج کرنے کی عادت ہوتی ہے۔ چین میں ایسے ہی ایک شخص کو عضو مخصوصہ میں سوزش کا عارضہ لاحق ہوا جس سے اسے جھلاہٹ سی رہنے لگی اور اس نے ایسے طریقے سے اپنا علاج کر ڈالا کہ کوئی تصور بھی نہ کر سکتا تھا۔ میل آن لائن کے مطابق اس 60سالہ شخص نے عضو میں ہونے والی خارش

سے نجات پانے کے لیے موبائل فون کے چارجر کی تین فٹ لمبی تار عضو میں داخل کر دی جو مثانے میں جا کر پھنس گئی اور وہ اسے واپس باہر نکالنے میں ناکام ہو گیا۔تار کی وجہ سے اس کے مثانے میں زخم آ گئے اور اس کے عضو سے خون بہنے لگا جس پر اس کی عقل ٹھکانے آئی اور وہ ڈاکٹر کے پاس چلا گیا،جس نے لیزر کی مدد سے مثانے میں الجھی تار کو کاٹ کر اس کے جسم سے نکال دیا۔ اس شخص کا علاج کرنے والے دیلیان ہسپتال کے ڈاکٹر گاﺅ ژین فینگ کا کہنا تھا کہ ”اس شخص نے5ملی میٹر موٹی تار اپنے جسم میں داخل کی جس کی مثانے میں گانٹھ پڑ گئی تھی۔جوں جوں مریض اسے باہر نکالنے کی کوشش کرتا گیا گانٹھ اور مضبوط ہوتی گئی اور زخم آنے سے اس کے جسم سے خون آنے لگا۔ “ یہ حرکت کرنے والے شخص کا کہنا تھا کہ ”اس واقعے سے میں نے سبق سیکھ لیا ہے، آئندہ میں کبھی بھی گھر پر اپنا علاج کرنے کی کوشش نہیں کروں