بجٹ19-2018:سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں کتنے فیصد اضافہ کیا جانے والا ہے ؟ بریکنگ نیوزآ گئی

اسلام آباد:وفاقی بجٹ 2018-19 میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں، پنشن اور مراعات کے چار نکاتی پیکیج پر کام جاری ہے ،دستیاب وسائل کے اندر رہتے ہوئے ان میں سے کچھ اقدامات کا اعلان بجٹ میں کیا جائے گا ،مجوزہ پیکیج میں 10سے 20فیصد تک ایڈہاک ریلیف الائونس، پنشن میں25فیصد تک اضافہ اور گریڈ پندرہ تک کے ملازمین کا

ماہانہ میڈیکل الائونس 1500 روپے سے بڑھاکر2000روپے ماہانہ کرنے جیسی تجاویز شامل ہیں جبکہ سرکاری ملازمین و افسرانکو2000روپے سے 16000روپے ماہانہ یوٹیلیٹی الائونس دینے کی تجویز کو بھاری اخراجات کے سبب پیکیج سے باہر کر دیا گیا ہے ،وفاقی وزارت خزانہ کے متعلقہ ریگولیشن ونگ میں اس پیکیج کی جن تجاویز کا تخمینہ لاگت تیار کیا جا رہا ہے اس میں سرکاری ملازمین کو ایڈہاک ریلیف الائونس 2018کی مد میں پہلی تجویز میں10فیصد، دوسری تجویز میں15فیصد اور تیسری تجویز میں20فیصد ایڈہاک ریلیف الائونس شامل ہے ،ملک بھر کے پنشنروں کو اس سال بہتر پیکیج دینے پر غور کیا جا رہا ہے جس میں پرانے پنشنروں کی پنشن میں25فیصد اضافہ جبکہ نئے پنشنروں کی پنشن میں20فیصد اضافہ کی تجویز ہے،اس کے ساتھ ساتھ گریڈ ایک تا گریڈ15تک کے سرکاری ملازمین کے میڈیکل الائونس میں پانچ سو روپے ماہانہ اضافہ کرنے اور اسے 1500روپے سے بڑھاکر2000روپے ماہانہ کرنے کی تجویز ہے گریڈ19سے گریڈ 22 کے افسران کیلئے انٹرٹینمنٹ الائونس کو د گنا کرنے کی تجویز ہے ، ان تجاویز پر حتمی فیصلہ وزیراعظم کے زیر صدارت وفاقی کابینہ کے حتمی اجلاس میں کیا جائے گا ۔