مجھے تو نظر آ رہا ہے کہ شریف خاندان۔۔۔اعتزاز احسن نے پانامہ کیس کے فیصلے کے حوالے سے تہلکہ خیز پیشگوئی کر دی

لاہو:پیپلز پارٹی کے راہنما سپریم کورٹ بار کے سابق صدر بیر سٹراعتزازاحسن نے کہا ہے کہ نیب عدالتوں میں شریف فیملی کے خلاف چلنے والے مقدمات میں مجھے سزا کے سوا کچھ نظر نہیں آرہا، امکان ہے نوازشریف 10 سے 12 دن اڈیالہ میں قید رہیں گے اوراس کے بعد انہیں ضمانت مل جائے گی۔

سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اعتزاز احسن نے مزید کہا کہ نیب نے پنجاب کا رخ کیا تو دونوں بھائیوں کی چیخیں نکل گئی ہیں،دونوں بھائی معافیاں مانگ رہے ہیں۔نوازشریف کے نیب قوانین معطل کرنے کے بیان کی کوئی قانونی حیثیت نہیں۔ نواز شریف چاہتے ہیں نیب کے قوانین کو مستقل طور پر معطل کیا جائے۔اعتزاز احسن نے کہا کہ نیب کی پنجاب میں کارروائیاں نوازشریف کے لئے پریشان کْن ہیں، آشیانہ سکیم اور احدچیمہ کامعاملہ آیا تو شہبازشریف نے ہاتھ جوڑلئے اور اب وزیراعلیٰ پنجاب کہتے ہیں کہ نظام چلنے دیں کوئی درمیانی راستہ نکالیں۔اعتراز احسن نے کہا کہ احد چیمہ اورچندافسران گرفتارہونے پر مسلم لیگ (ن )کی چیخیں نکل گئیں، ادارے جب پنجاب کی طرف آئے تو حکمران جماعت نے ان پر اعتماد کرنا چھوڑ دیا جبکہ شریف خاندان کا 30سال سے کوئی احتساب ہی نہیں ہوا۔دوسری جانب خبر کے مطابق سپریم کورٹ نے کیس میں طویل مہلت کے اصرار پر بیرسٹر اعتزاز احسن پر 10 ہزار روپے جرمانہ عائد کردیا تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں

فارمولا دودھ کے خلاف ازخود نوٹس کیس کی سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار نے کی۔ عدالتی طلبی پر میجی فارمولا دودھ کمپنی کے مالک پیش ہوئےاور عدالت میں بیان دیا کہ آئندہ میجی فارمولا ملک کے ڈبوں سے دودھ کا لفظ حذف کردیا جائے گا۔کمپنیوں کے وکیل اعتزازاحسن کے جونیئر وکیل نے عدالت میں بیان دیا کہ اعتزازاحسن مصروفیت کی بنا پر پیش نہیں ہوسکتے لہذا عدالت انہیں مہلت دے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ ہمیں اعتزازاحسن کے نام سے نہ ڈرائیں وہ ہمارے لئے محترم ہیں، اعتزازاحسن پارلیمنٹ میں کہتے ہیں کہ ہم اختیارات سے تجاوز کررہے ہیں یہی بات وہ ہمارے سامنے بھی آکر کہیں۔عدالت نے طویل مہلت کے اصرار پر اعتزازاحسن پر 10 ہزار روپے جرمانہ عائد کرتے ہوئے نیسلے ملک کے وکیل کو دلائل کے لئے طلب کرلیا جب کہ کیس کی سماعت آج تک کے لئے ملتوی کر دی، سٹراعتزازاحسن نے کہا ہے کہ نیب عدالتوں میں شریف فیملی کے خلاف چلنے والے مقدمات میں مجھے سزا کے سوا کچھ نظر نہیں آرہا ۔وکیل کو دلائل کے لئے طلب کرلیا جب کہ کیس کی سماعت آج تک کے لئے ملتوی کر دی، سٹراعتزازاحسن نے کہا ہے کہ نیب عدالتوں میں شریف فیملی کے خلاف چلنے والے مقدمات میں مجھے سزا کے سوا کچھ نظر نہیں آرہا ۔