بریکنگ نیوز: وہی ہوا جس کا ڈر تھا ، سپریم کورٹ آف پاکستان کے اہم ترین جج صاحب کے گھر پر اندھا دھند فائرنگ، تشویشناک اطلاعات موصول

لاہو:سپریم کورٹ کے جج جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کردی، چیف جسٹس ثاقب نثار اطلاع ملتے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پہنچ گئے اور آئی جی پنجاب کو طلب کر لیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سپریم کورٹ کے جج جسٹس اعجاز الاحسن کی لاہورمیں واقع رہائشگاہ

پر فائرنگ گزشتہ رات اور آج صبح کی گئی ،چیف جسٹس آف پاکستان اطلاع ملتے ہی ان کے گھر پہنچ گئے اور آئی جی پنجاب کو طلب کر لیا۔چیف جسٹس ثاقب نثارخودساری صورتحال کا جائزہ لے رہے ہیں۔واضح رہے کہ جسٹس اعجاز الاحسن پاناما ریفرنس میں نگران جج ہیں،اس کے علاوہ وہ پاناما سمیت اہم مقدمات اور فیصلوں کا حصہ رہے ۔یاد رہے سپریم کورٹ آف پاکستان کے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کا واقعہ پیش آیا ہے تاہم اب تک کسی طرح کے نقصان کی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔ذرائع کے مطابق جسٹس اعجاز الاحسن کی لاہور میں رہائش گاہ پر گزشتہ رات اور آج صبح فائرنگ کے واقعات پیش آئے۔ترجمان سپریم کورٹ کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر دورہ کیا اور فائرنگ کے واقعے کا جائزہ لیا۔چیف جسٹس نے انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب پولیس کو بھی جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر طلب کرلیا۔خیال رہے کہ جسٹس اعجاز الاحسن نواز شریف اور ان کے اہلِ خانہ کے خلاف کیس پاناما پیپرز کیس کی سماعت کرنے والے پانچ رکنی بینچ کا حصہ ہیں۔جسٹس اعجازالاحسن سپریم کورٹ کی جانب سے پاناما پیپز کیس کے حتمی فیصلے کی روشنی میں قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے احتساب عدالت میں دائر ریفرنسز کی کارروائی کے نگراں جج بھی ہیں۔ـ