”جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر فائرنگ نہیں ہوئی بلکہ۔۔۔“ عامر لیاقت نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا، ایسی بات کہہ دی کہ سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا ہو گیا

لاہور:سپریم کورٹ کے جج جسٹس اعجاز الاحسن کی گھر پر فائرنگ کے معاملے پر قیاس آرائیوں کا سلسلہ جاری ہے اور ہر کوئی اس واقعے کے پیچھے چھپے افراد کو سامنے لانے کے مطالبے میں مصروف ہے مگر ایسے میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنماءڈاکٹر عامر لیاقت نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا ہے۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں عامر لیاقت حسین نے کہا کہ ”جسٹس اعجازالاحسن کے گھر پر فائرنگ نہیں ہوئی بلکہ نونی دہشت گردوں کی نئی ’ہائرنگ‘ ہوئی ہے اور انہیں آزمانے کیلئے معزز جج کے گھر بھیجا گیاآخر مافیا جعلی ہویا اصلی مافیا تو مافیا ہوتی ہے۔“

ایک اور ٹویٹ میں ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے کہا کہ ”جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ کے احکامات وہیں سے آئے جہاں سے ماڈل کالونی میں نسل کشی کیلئے ’مچھڑ بدمعاش‘ نے اپنی نفرت کا زہر گولیوں کی شکل میں درود پھڑنے والوں پر اتار دیا تھا۔“