وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے امریکی ایئرپورٹ پر کپڑے اترواکران کے ساتھ کیا سلوک کیاگیا؟ معروف صحافی رﺅف کلاسرا نے سنگین دعویٰ کردیا

اسلام آبادمعروف صحافی رئوف کلاسرا نے گفتگو کے دوران کہا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ ن اور نواز شریف نے فیصلہ کر لیا ہے کہ چیف جسٹس کا ایک ایک لفظ پکڑ کر اس کا پوسٹ مارٹم کیا جائے ۔ تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی و اینکر پرسن رئوف کلاسرا نےنجی ٹی وی کے ایک پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے

کہ نواز شریف سمیت دیگر رہنمائوں کا وطیرہ بن چکا ہے کہ وہ چیف جسٹس کے ایک ایک لفظ کو پکڑ کر اس کا ہر جگہ پوسٹ مارٹم کرتے ہیں ۔ عوام کو یہ تاثر دیا جارہا ہے کہ ہمارے ساتھ اچھا سلوک نہیں ہوا ۔ نواز شریف نے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو فریادی کہنے پر چیف جسٹس کا برا منایا،جبکہ انہوں نے خود ہی اٹارنی جنرل کے ذریعے چیف جسٹس آفس کو ایک درخواست بھجوائی جس میں کہا گیا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی آپ سے ملنا چاہتے ہیں جس کو چیف جسٹس آف پاکستان نے قبول کیا اور ملاقات بھی کی ۔ سینئر صحافی رئوف کلاسرا کا مزید کہنا تھا کہ شاہد خاقان عباسی خود کو وزیراعظم نہیں سمجھتے انہوں نے اپنی سیکورٹی بھی نواز شریف کو دی ہوئی ہے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ نواز شریف ایک دفعہ امریکہ پر بیان دینے کی جرات تو کریں ملک کے وزیراعظم کی جس طرح امریکہ ائیر پورٹ پر تلاشی لے گئی ان کی عزت خطرے میں نہیں پڑی جبکہ چیف جسٹس نے کہہ دیا کہ ملاقات کیلئے فریادی آئے تھے جس پر وایلا مچایا جارہا ہے ۔ ائیر پورٹ پر تلاشی لے گئی ان کی عزت خطرے میں نہیں پڑی جبکہ چیف جسٹس نے کہہ دیا کہ ملاقات کیلئے فریادی آئے تھے جس پر وایلا مچایا جارہا ہے ۔