اس لڑکی کا ریپ کرنا ایسا ہی تھا جیسے۔۔ 2 کھلاڑیوں کی جانب سے نوجوان لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کا مقدمہ، ان کی جانب سے کیا گیا ایک ایسا واٹس ایپ میسج سامنے آگیا کہ پورا ملک لڑکی حق میں باہر آگیا

بیلفاسٹ: شمالی آئر لینڈ میں کچھ عرصہ قبل رگبی کے دو کھلاڑیوں نے ایک لڑکی کو اجتماعی جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالا تھا جنہیں گزشتہ روز عدالت نے بری کر دیا۔ عدالتی فیصلے کے چند گھنٹے بعد ہی ان کھلاڑیوں کی طرف سے کیا گیا ایک واٹس ایپ میسج منظرعام پر آ گیا ہے جو انہوں نے لڑکی کے ساتھ زیادتی کے بعد اپنے ساتھیوں کو بھیجا تھا۔

اس میسج میں ایسی شرمناک بات کہی گئی ہے کہ پورے ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیااور ہزاروں لوگوں متاثرہ لڑکی کی حمایت میں سڑکوں پر نکل آئے۔ میل آن لائن کے مطابق پیڈی جیکسن اور سٹورٹ اولڈنگ کو 8مرد اور 3خواتین ججوں پر مشتمل بیلفاست جیوری نے الزام سے بری قرار دیا۔ جس کے کچھ دیر بعد واٹس ایپ پیغام منظر عام پر آیا جس میں ایک ملزم نے لکھا تھا کہ ”اس لڑکی کے ساتھ جنسی تعلق ایسا پرلطف تھا جیسے بندہ شہر کے تفریحی مقامات کی سیر کرانے والی سواری پر بیٹھا ہو۔“اس پیغام کے سامنے آنے پر شمالی آئرلینڈ کے دارالحکومت میں ہزاروں افراد سڑکوں پر نکل آئے اور عدالتی فیصلے کے خلاف احتجاج کرنے لگے۔ سوشل میڈیا پر بھی ’I Believe Her‘ کا ہیش ٹیگ سرفہرست آ گیا جس کے تحت لاکھوں انٹرنیٹ صارفین لڑکی سے اظہار یکجہتی اور ملزمان کا دوبارہ ٹرائل کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔واضح رہے کہ تین کھلاڑی 26سالہ جیکسن، 25سالہ اولڈنگ اور 26سالہ بلین مکلوری ایک کلب میں پارٹی کے بعد لڑکی کو بہانے سے اپنے ساتھ ایک اپارٹمنٹ پر لے گئے جہاں نشے میں دھت ہو کر جیکسن اور اولڈنگ نے اسے زیادتی کا نشانہ بنایا ۔ یہ واقعہ جون 2016ءمیں پیش آیا تھا۔