چودھری نثار 2018 کا الیکشن کس پلیٹ فارم سے لڑیں گے؟ سابق وزیر داخلہ کے اعلان نے لیگی رہنماؤں کے چھکے چھڑا دیے

لاہور:چوہدری نثار نے اعلان کیا ہے کہ وہ 2 ہفتے تک اعلان کر دیں گے کہ انہوں نے کس پلیٹ فارم سے الیکشن لڑنا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار کی جانب سے کہا گیا ہے کہ الیکشن لڑنے کے حوالے سے فیصلہ وہ خود کریں گے نہ کہ ان کی پارٹی۔چوہدری نثار کا کہنا ہے الیکشن کیلئے ٹکٹ کے حوالے سے فیصلہ پارٹی نہیں

بلکہ میں خود کروں گا۔تفصیلات کے مطابق انہیں ن لیگ کا ٹکٹ درکار ہے یا نہیں، الیکشن کس پلیٹ فارم سے لڑنا ہے، اس حوالے سے 2 ہفتے تک فیصلہ کرکے اعلان کردوں گا۔ چوہدری نثار نے وزیراعظم اور چیف جسٹس کی ملاقات پر بھی ردعمل دیا ہے۔ چوہدری نثار کا کہنا ہے کہ اس ملاقات سے ابہام دور نہیں ہوئے بلکہ مزید بڑھ گئے ہیں۔ چوہدری نثار نے شہباز شریف کے دورہ لندن کے حوالے سے کی جانے والی قیاس آرائیوں کی بھی مذمت کی ہے۔ چوہدری ںثار کا کہنا ہے کہ شہباز شریف سے متعلق غلط افواہیں پھیلانے سے گریز کرنا چاہیئے۔ چوہدری نثار کا کہنا ہے کہ خدشہ ہے کہ شہباز شریف کو پارٹی میں مکمل اختیارات نہیں دیے جائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق سابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار نے۔کہا ہے کہ اگر پارٹی کو گھر کی لونڈی بنایا گیا تو فوری ن لیگ کو خیر آباد کہہ دیں گے۔ چوہدری نثار کا کہنا ہے کہ ان کا سابق وزیراعظم نواز شریف سے اب کوئی رابطہ نہیں رہا۔شہباز شریف کے حوالے سے چوہدری نثار کا کہنا ہے کہ انہیں خدشہ ہے کہ وزیراعلی پنجاب کو اختیارات نہیں دیے جائیں گے۔ شہباز شریف کو آزادی سے کام نہیں کرنے دیا جائے گا۔ چوہدری نثار کا مزید کہنا ہے کہ اگر شہباز شریف کو مکمل اختیارات دیے جائیں تو تب ہی معاملات بہتر ہو سکتے ہیں۔ شہباز شریف کی جانب سے مکمل اختیارات کے ساتھ پارٹی کے معاملات سنبھالنا ہی حالات کو بہتر کر دے گا۔